2012

2012-Sہالی وڈ کے مشہور جرمن فلمساز، ہدایت کار اور مصنف Roland Emmerich کی نئی آنے والی فلم 2012ء جس کی ٹیگ لائن We Were Warned رکھی گئی ہے میں دنیا کی مکمل تباہی دکھائی ہے۔ فلم کے مختلف حصوں میں دنیا کی مشہور و معروف عمارتوں کو ماچس کی تیلیوں کی طرح زمیں بوس ہوتے دکھایا گیا ہے جن میں سب سے زیادہ قابل ذکر White House (امریکی صدر کی رہائش گاہ)، Poseidon (قدیم یونانی مذہب میں پانی کے خدا کا مجسمہ)، Sistine Chapel (ویٹیکن کی مشہور عیسائی عبادت گاہ)، Christ the Redeemer (دنیا کا سب سے طویل قامت اور عیسائی مذہب کا مقدس ترین مجسمہ) جیسی مشہور عمارات شامل ہیں۔
گذشتہ دنوں رولنڈ امرچ نے ایک انٹرویو کے دوران انکشاف کیا کہ وہ اس فلم کے سکرپٹ کے مطابق دیگرعمارتوں کی طرح کعبہ کو بھی گرتے ہوئے دکھانا چاہتے تھے لیکن ان کے ساتھی نے انہیں ایسا کرنے سے روک دیا. جس کی وجہ عرب (مسلمانوں) کی جانب سے مذہبی مقامات کی بے حرمتی کے خلاف متوقع سخت ردعمل ہے. فلم ڈائریکٹر کا کہنا تھا:

We have to all, in the western world, think about this. You can actually let Christian symbols fall apart, but if you would do this with [an] Arab symbol, you would have a fatwa, and that sounds a little bit like what the state of this world is. So it's just something which I kind of didn't [think] was [an] important element, anyway, in the film, so I kind of left it out.

مغربی ویب سائٹس اور بلاگرز کا کہنا ہے کہ اس منظر کو ہٹانے کی بڑی وجہ وہ خوف ہے جو اسلامی دہشت گردوں نے پوری دنیا میں پھیلایا ہوا ہے جس کی جھلک اس فلم کے ڈائریکٹر کے بیان میں نظر آتی ہے. دوسری طرف بعض لوگوں کا موقف ہے کہ فلم کے آخری حصہ سے اس منظر کو ہٹانے سے اس فلم کا اثر زائل ہوجائے گا اور یہ محسوس ہوگا کہ پوری دنیا فناء ہوجانے کے بعد بھی کعبہ اپنی جگہ موجود رہے گا.

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

6 تبصرے

  1. اس فلم کا کوئی ٹارنٹ شارنٹ آ گیا کیا؟

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب
  2. @ڈفر
    یہ فلم 13 نومبر 2009ء کو اکثر ممالک میں ریلیز کردی گئی تھی. اس لیے امید تو یہی ہے کہ ٹارنٹ آچکا ہوگا اب تک. 😉

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب
  3. Uncle Tom says:

    یعنی کے ان کو سکیولر مسلمانوں کا خوف نہیں ؟؟؟ چلو کوی تو طالبان کی اچھای نظر آی لیکن اسپر اب کوی تبصرہ نہیں ہو گا

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب
  4. @سعد
    بلاگ پر خوش آمدید. ربط کا شکریہ.
    میں اس بلاگ کے موضوع سے ہٹ کر اس فلم کے مرکزی خیال پر کچھ تحقیق کرنا چاہ رہا تھا جس میں آپ کا دیا گیا ربط بھی مددگار ثابت ہوگا.

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب
  5. اس فلم نے تو بڑا ہی مایوس کیا۔ اسکرپٹ نجانے کس گدھے نے لکھا ہے، اتنی غلطیاں 😯 😯 ۔
    البتہ چند مناظر مجھے پسند آئے جن میں سے ایک آخر میں ہمالیہ کے اوپر سے آنے والی سمندری لہر کا ہے۔

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *