بے لاگ - اردو بلاگران کی منتخب تحاریر کا مجموعہ

انٹرنیٹ پر آج اردو زبان جس مقام پر آپہنچی ہے اس میں بہت سے اردو بلاگران کی انفرادی کوششیں بھی کار فرما ہیں۔ یونی کوڈ اردو کی ترویج کے لیے تیار کیے گئے پاک اردو انسٹالر ہی کی افادیت اور شہرت سے اس بات کا بخوبی اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ کیسے ایک بلاگر (ابوشامل) کے ذہن میں کوئی خیال آیا اور دوسرے بلاگر (ایم بلال ایم) نے اسے اپنی تکنیکی مہارت سے عملی جامہ پہنا کر انٹرنیٹ پر اردو زبان کی دن دگنی رات چگنی ترقی ممکن بنائی۔ آج نہ صرف فیس بک، ٹویٹر وغیرہ پر لکھنے والے ان خدمات سے مستفید ہورہے ہیں بلکہ آن لائن دنیا سے باہر روایتی ذرائع ابلاغ و دیگر ادارے بھی اس کا بھرپور فائدہ اٹھا رہے ہیں۔

گزشتہ چند سالوں کے دوران اردو بلاگران نے انٹرنیٹ سے باہر کی دنیا میں بلاگ سے متعلق آگہی میں اضافے کے لیے بھی کوششیں کیں۔ سال 2013 میں دو روزہ اردو بلاگرز کانفرنس، 2015 میں اردو سوشل میڈیا سمٹ اور پھر رواں سال یعنی 2016 میں منتخب اردو بلاگز کے کتابی مجموعے "بے لاگ" کا اجرا قابل ذکر ہے۔ گزشتہ ماہ بے لاگ کی تقریب رونمائی لاہور میں منعقد ہوئی جس میں اردو بلاگران کے علاوہ صحافیوں نے بھی شرکت کی۔

Baylaag Urdu Bloggers Book

بے لاگ کیا ہے؟

یہ اردو زبان میں بلاگنگ کرنے والے احباب کی تحاریر کا مجموعہ ہے۔ 208 صفحات پر مشمل اس کتاب میں تقریباً 34 مرد و خواتین بلاگران کے 55 سے زائد بلاگز موجود ہیں۔ اس کتاب کے لیے اردو بلاگز کو مرتب کرنے کی ذمہ داری خاور کھوکھر اور رمضان رفیق نے انجام دی ہے۔ اس میں آپ کو مذہب، تاریخ، طنز و مزاح، سیاست، معاشرت اور صحافت کے موضوعات پر لکھے گئے بلاگز ملیں گے۔ یوں یہ کتاب اپنے متنوع موضوعات کی وجہ سے کافی منفرد ہے۔ اس کی قیمت صرف 300 روپے رکھی گئی ہے جو میرے خیال سے بہت مناسب ہے۔

اس کتاب میں میرا کوئی بلاگ شامل نہیں ہے۔ رمضان رفیق صاحب کے بارہا اصرار پر شکر گزار ہوں لیکن مجھے اپنی کوئی تحریر کتاب کے قابل نہیں لگی۔ دیگر دو مواقعوں (کانفرنس اور سمٹ) کے برعکس بے لاگ پر اردو بلاگرز کا ردعمل بہت مثبت رہا جو خوش آئند ہے۔ اس کا سہرا بھی رمضان بھائی کے سر باندھنا چاہیے جن کی صلاحیتوں نے بلاگران کے درمیان رابطے کے فقدان کو پُر کیا اور ایک ایسی تقریب کا انعقاد ممکن ہوا جس پر اکثریت مطمئن ہے۔ اس تقریب کی آڈیو ریکارڈنگ ذیل میں موجود ہے:

بے لاگ کیسے حاصل کریں؟

اردو بلاگران کی منتحب تحاریر کا مجموعہ "بے لاگ" پاکستان کے چار مختلف شہروں میں دستیاب ہے۔ اگر آپ ان میں سے کسی بھی شہر میں رہائش پذیر ہیں تو نیچے دی گئی جگہوں سے باآسانی حاصل کرسکتے ہیں۔ بصورت دیگر پرائم کمیونی کیشنز سے فون نمبر 03336888039 پر رابطہ کر کے بھی بذریعہ ڈاک منگوا سکتے ہیں۔

لاہور: منور پبلی کیشنز، ماڈل ٹاؤن (03214291904) / پرائم کمیونی کیشنز، رائل پارک (03336888039)
کراچی: آئیڈیل پوائنٹ، بہادرآباد (02134129952)
جہلم: بک کارنر، اقبال لائبریری روڈ (0544614977)
چیچہ وطنی: اسکالرز ماڈل اسکولز، حیات آباد (03336892343) / مغل بک کارنر، اوکانولا روڈ (03136975962)

میں کراچی میں رہائش پذیر ہوں اس لیے یہاں "بے لاگ" کی مفت ترسیل میرے لیے ممکن ہے۔ جو احباب گھر بیٹھے بغیر کسی اضافی قیمت کے کتاب حاصل کرنا چاہیں وہ مجھ سے رابطہ کریں۔ پیغام بھیجتے ہوئے اپنا نام، ای میل، فون نمبر، مکمل پتہ اور کتابوں کی تعداد ضرور لکھیں۔ تصدیق کے بعد مطلوبہ تعداد میں کتابیں بذریعہ کورئیر ارسال کردی جائیں گی۔

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

9 تبصرے

  1. Boht achi kaawish ha..mubarakbaad

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب
  2. واقعی ایک بہت اچھی کاوش ہے، اردو بلاگنگ کی ترویج اور نئے لکھنے والوں کی تحریک کےلئے معاون ثابت ہوگی یہ کتاب۔
    ایسے ہی اردو ادب میں کچھ مختلف پڑھنے کو ملے گا، منتظمین کا شکریہ

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب
  3. فیضان says:

    ماشاللہ۔ بہت ہی اچھی اور معنی خیز تحریر ہے۔ بلاگ کااشاعت شدہ مجموعہ ۔ ۔ اپنے میں ایک منفرد خیال ہے۔

    امید کرتا ہوں کہ یہ اشاعت قارئین میں مقبول ہوگی۔

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب
  4. سعود says:

    زبردست میرا شہر چیچہ وطنی بھی ہے.

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب
  5. السلام علیکم۔۔۔ جناب بیرون ملک مقیم قارئین یہ کتاب کیسے حاصل کر سکتے ہیں؟

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب
  6. This is great initiative. Getting the blogs published in book form is unique idea, and for people who are comfortable with paper-based reading would be able to reading quality blog content. I bid you and others well for this endeavor.

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب
  7. سعود says:

    کتاب تو مل گئی مگر مغل بک کارنر والوں کے پاس نہ ہی کتاب تھی اور نہ انہیں کتاب کے بارے میں کچھ علم تھا.

    کتاب ماشاءاللہ بہت اچھی ہے مگر قیمت کی مناسبت سے کتاب مجلد اور کاغذ بہتر ہونا چاہیے تھا.

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب
  8. Sarwat AJ says:

    خوب

    اس تبصرے کا جواب دیںجواب
  1. September 30, 2016

    […] گئی ہے اور یہ باآسانی کراچی ، لاہور اور اسلام آباد میں دستیاب […]

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *